Home / کھیل / گرونوبل [مشرقی فرانس] میں برقینی میں احتجاجی سوئمنگ کے بعد پول بند

گرونوبل [مشرقی فرانس] میں برقینی میں احتجاجی سوئمنگ کے بعد پول بند

برطانوی اخبار ’دی گارجین‘ کے مطابق گروبوبل کے سوئمنگ پولز پر تعینات گارڈز نے 2 عوامی سوئمنگ پولز کو اس وقت بند کردیا جب وہاں 2 مسلمان خواتین مکمل پردے والا سوئمنگ کا لباس برقینی پہن کر پہنچیں۔ حکام کی جانب سے جاری کیے گئے بیان میں سوئمنگ پولز کو بند کرنے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ یہ قدم امن امان کو یقینی بنانے کے لیے اٹھایا گیا۔

اس وقت فرانس سمیت یورپ بھر میں شدید گرمی کی لہر جاری ہے اور لوگ ہیٹ اسٹروک سے بچنے کے لیے سوئمنگ پولز کا رخ کر رہے ہیں۔ گرونوبل سمیت فرانس کے کئی علاقوں میں حکومت نے دہشت گردی کے واقعات کے بعد 2017 میں برقینی پر پابندی عائد کردی تھی۔

حکام کے مطابق برقینی پہننے والی خواتین کو سوئمنگ پول میں دیکھ کر لوگ خوف زدہ ہوجاتے ہیں۔ برقینی سوئمنگ کا ایسا لباس ہے، جس میں خواتین کا پورا جسم ڈھانپا ہوا ہوتا ہے اور یہ لباس زیادہ تر یورپی و امریکی مسلمان خواتین سوئمنگ کے دوران کرتی ہیں۔

فرانس میں برقینی پر پابندی کے بعد وہاں مسلمان خواتین سمیت دیگر مذاہب سے تعلق رکھنے والی خواتین نے مظاہرے بھی کیے تھے اور بعد ازاں کئی علاقوں میں اس پر عائد پابندی کو معطل کردیا گیا تھا۔

فرانسیسی ادارے ’فرانس بلیو‘ کے مطابق اس منفرد احتجاج کا اہتمام امریکی سماجی کارکن روزا پارکس کی جانب سے گذشتہ برس شروع کی گئی مہم برقینی پر پابندی کے خلاف مہم کے تحت کیا گیا۔ اس منفرد احتجاج میں مسلمان خواتین سمیت غیر مسلمان خواتین نے بھی اظہار یکجہتی کے طور پر برقینی پہن کر سوئمنگ پول میں نہایا اور حکام کو پیغام دیا کہ یہ لباس دہشت گردی کی علامت نہیں بلکہ خودمختاری کی علامت ہے۔

رپورٹ کے مطابق پابندی کے باوجود برقینی پہن کر سوئمنگ کرنے والی 2 خواتین کو پولیس اہلکاروں نے حراست میں بھی لیا اور بعد ازاں ان پر جرمانہ عائد کرکے انہیں رہا کردیا گیا

About admin

Avatar

Check Also

کرکٹ ورلڈ کپ2019 پر ایک نظر

انگلینڈ نے ورلڈ کپ کے فائنل میں ایک دلچسپ مقابلے کے بعد اعصاب شکن میچ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے